نئی دہلی،25جنوری (اے یوایس) مغربی بنگال کے کولکاتا میں 23 جنوری کو نیتا جی سبھاش چندر بوس کے جینتی تقریب کے دوران ہوئی نعرے بازی کے حادثہ پر ممتا بنرجی نے ردعمل ظاہر کیا ہے۔ مغربی بنگال کی وزیر اعلیٰ ممتا بنرجی نے پیر کو ہگلی میں ایک عوامی تقریب کو خطاب کرتے ہوئے بی جے پی پر اس موضوع کو لے کر جم کر تنقید کی ہے۔ انہوں نے اس دوران یہاں تک کہا، ’میں بی جے پی کے سامنے سر جھکانے کے بجائے اپنا گلا کاٹنا چاہوں گی۔واضح رہے کہ 23 جنوری کو وکٹوریا میموریل میں نیتا جی جینتی تقریب میں ممتا بنرجی نے تب خطاب کرنے سے منع کردیا تھا، جب وہاں بھیڑ میں موجود لوگوں نے جے شری رام کے نعرے لگائے تھے۔

اسے لے کر پیر کو ممتا بنرجی نے کہا، ’ان لوگوں نے وزیر اعظم نریندر مودی کے سامنے میری توہین کی ہے۔ میں بندوق میں نہیں، بلکہ سیاست میں یقین رکھتی ہوں ’۔ بی جے پی نے نیتا جی اور بنگال کی توہین کی ہے۔ممتا بنرجی نے کہا، ’اگر آپ نے نیتا جی سبھاش چندر بوس کی جے کی ہوتی تو میں ا?پ کو سلام کرتی، لیکن اگر ا?پ مجھے بندوق کی نوک پر رکھنے کی کوشش کرو تو مجھے پتہ ہے کہ کیسے جوابی حملہ کرنا ہے۔ اس دن انہوں نے (ناظرین) نے بنگال کی توہین کی تھی’۔