نئی دہلی،30دسمبر(اے یو ایس)وزیراعظم نریندر مودی نے آج کہا کہ شہریت ترمیمی قانون کا مقصدہمسایہ ملکوں میں رہنے والے ان اقلیتوں کو شہریت دینے کا مقصد جو اپنے ملکوں میں عتاب کے شکار ہیں۔انہوں نے بی جے پی کے ورکروں کو کہا کہ وہ شوشل میڈیا کے ذریعہ اس قانون کے بارے میں لوگوں کو آگاہ کرے۔مسٹر مودی نے کہا کہ اس قانون سے کسی بھی ہندوستانی کی شہریت چھینی نہیں جارہی ہے۔ بلکہ اس کا مقصد پاکستان،افغانستان اور بنگلہ دیش سے آئے ہوئے لوگوں کوشہریت کے حقوق دینا ہے جو وہاں سے بھاگ کر آئے ہیں۔

اس مسئلے پر پچھلے دو ہفتوں کے دوران ملک بھر میں مظاہرے ہورہے ہیں اور حکومت سے مطالبہ کیاجارہا ہے کہ وہ اس قانون کو واپس لے۔اپوزیشن جماعتوں خاص کر کانگریس کا کہنا ہے کہ شہریت ترمیمی قانون این آر سی کے ساتھ جوڑاجائے گا۔ اور اس سے مسلمانوں کو باہر رکھا ہے۔ اپوزیشن نے پارلیمنٹ میں بھی اس مسئلے کو بڑے زور وشور سے اٹھایا لیکن حکومت بل کو پاس کرانے میں کامیاب ہوگئی۔