نئی دہلی،27 جولائی (اے یو ایس)عام آدمی پارٹی کے راجیہ سبھا کے ممبر سنجے سنگھ کو ایوان سے معطل کردیاگیا ہے۔آج انہوں نے ایوان میں ہنگامہ کیا اور ایوان کے دستاویز کو پھاڑدیا جس پر انہیں کارروائی میں حصہ نہ لینے کا حکم دیا۔ اب تک راجیہ سبھا اور لوک سبھا کے 24ممبر ان پارلیمنٹ کو ہنگامہ آرائی کی پاداش میں مانسون سیشن کے باقی ماندہ اجلاسوں سے معطل کردیاگیا۔اس دوران راجیہ سبھا کے معطل شدہ ممبروں نے 50گھنٹے کا احتجاج پارلیمنٹ کمپلیکس میں شروع کیا، رپورٹ میں کہاگیا جب راجیہ سبھا کی کارروائی کل شام پونے چاربجے شروع ہوئی تو سنجے سنگھ نے دوسرے ممبروں کے ساتھ مل کر نعرے لگائے اور وہ گجرات میں زہریلی شراب پینے کی وجہ سے 28لوگوں کے اموات کا مسئلہ اٹھانا چاہتے تھے۔

جب ڈپٹی چیئرمین نے انہیں اپنی سیٹ پر جانے کی ہدایت دی تب انہوں نے کاغذات پھاڑ کر ان کی طرف پھینکے اور اس کے فورا بعد انہیں معطل کیاگیا لیکن جاتے جاتے انہوں نے کہا کہ وہ زہریلی شراب سے مرنے والوں کے بارے میں حکومت کی وضاحت چاہتے ہیں۔آج ڈپٹی چیئر مین ہرونس نے کہا کہ سنجے سنگھ نے پارلیمان کے اصولوں کا کوئی لحاظ نہیں کیا اور اس کے بعد وزیرمملکت برائے پارلیمانی امور نے ایک ریزولوشن پیش کیا جس میں مسٹر سنگھ کو اس ہفتے پارلیمنٹ سے معطل کیاگیا۔