نئی دہلی،27اکتوبر(اے یوایس) ملک کا کوئی بھی شہری جموں و کشمیر میں زمین خرید سکتا ہے۔ مرکزی وزارت داخلہ نے منگل کو جموں و کشمیر اور لداخ میں زمین سے متعلق قوانین نوٹیفائی کئے جن کی رو سے ملک کا کوئی بھی شہری یہاں زمین خرید سکتا ہے۔ تاہم قوانین میں کہا گیا ہے کہ زرعی زمین صرف اور صرف زرعی مقاصد کے لئے ہی استعمال ہوگی۔ اس نوٹیفکیشن کے بعد اب کوئی بھی شخص جموں و کشمیر میں فیکٹری، گھر یا دوکان کیلئے زمینیں خرید وفروخت کرسکتا ہے۔ اس کیلئے اس کو پہلے کی طرح کوئی مستقل رہائشی سرٹیفکیٹ دینے کی ضرورت نہیں ہوگی۔

ادھر جموں و کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر منوج سنہا نے کہا کہ ہم چاہتے ہیں ملک کے دوسرے حصوں کی طرح جموں و کشمیر میں بھی صنعتیں قائم ہوں تاکہ یہاں ترقی اور بے روزگار نوجوانوں کو روزگار ملنا یقینی بن جائے۔ انہوں نے کہا کہ زرعی زمین کسانوں کے پاس ہی رہے گی اور اس کو صرف اور صرف اسی مقصد کے لئے استعمال کیا جائے گا۔ منوج سنہا نے یہ باتیں منگل کو یہاں راج بھون میں ایک پریس کانفرنس کے دوران مرکزی وزارت داخلہ کے تازہ احکامات کے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کا جواب دیتے ہوئے کہیں۔لیفٹیننٹ گورنر نے ان تازہ احکامات سے متعلق پوچھے جانے پر کہا کہ زرعی زمین کسانوں کے پاس ہی رہے گی اور اسی مقصد کے لئے استعمال ہوگی۔

ہم انڈسٹریل علاقوں کی شناخت کر رہے ہیں۔ ہم چاہتے ہیں کہ یہاں بھی ملک کے باقی حصوں کی طرح اچھی انڈسٹریز قائم ہوں تاکہ یہاں ترقی ہو اور نوجوانوں کو روزگار ملے۔انہوں نے سری نگر – جموں قومی شاہراہ پر جاری تعمیراتی پروجیکٹوں کے متعلق پوچھے گئے ایک سوال کے جواب میں کہا کہ میں قومی شاہراہ پر ہونے والا کام خود مانیٹر کر رہا ہوں۔ پروجیکٹ مقررہ ڈیڈ لائنز پر ہی مکمل ہوں اس بات کو یقینی بنانے کے لئے ہر ممکن کوشش کی جا رہی ہے۔