7 Views

استنبول،16اکتوبر(اے یوایس) ترکی میں اپوزیشن رہ نما اور ڈیموکریٹک پارٹی کے سربراہ علی باباجان کا کہنا ہے کہ "صدر رجب طیب اردغان اپنے اقتدار کو طْول دینے کی خاطر قبل از وقت انتخابات کی طرف جا سکتے ہیں "۔ جمعرات کے روز اپنے اخباری بیان میں انہوں نے باور کرایا کہ "ایردوآن کی حکومت 2023 کے انتخابات تک کھڑی نہیں رہ سکے گی”۔باباجان کے مطابق جون 2018 سے اب تک ملک کو درپیش اقتصادی مسائل جسٹس اینڈ ڈیولپمنٹ پارٹی کو کمزور کر رہے ہیں تاہم معاہدوں اور اتحادوں کے ذریعے نظام کو جاری رکھا جا سکتا ہے”۔

ڈیموکریٹک پارٹی کے سربراہ نے بتایا کہ "آئین میں قبل از وقت انتخابات کرانے پر ایک شق موجود ہے جو صدر کی مدت کو بھی نا مکمل شمار کرتی ہے۔ لہذا صدر کے منصب کی مجموعی مدت میں توسیع کے واسطے اس طریقے کو لاگو کیا جا سکتا ہے”۔باباجان کے مطابق حکمراں اتحاد نے پہلے ہی یہ ارادہ کر لیا تھا کہ اپوزیشن کو آئینی عدالت کا رخ کرنے سے روکا جائے جو اردغان کی صدارتی انتخابات میں ایک بار پھر نامزدگی پر پابندی عائد کرانا چاہتی تھی۔طیب اردغان 2014 اور 2018میں ترکی کے صدر منتخب ہو چکے ہیں۔باباجان کہتے ہیں کہ اردغان 2021 کے اواخر یا 2022کے اوائل میں قبل از وقت انتخابات کی طرف جا کر ایک بار پھر نامزد امیدوار بن سکتے ہیں۔